Mar 15, 2016

علم حدیث میں برصغیر پاک و ہند کا حصہ: ڈاکٹر محمد اسحاق

0 comments
علامہ رشید رجا مصری کی یہ رائے ہے کہ موجودہ زمانے میں علم حدیث کی تعلیم و اشاعت میں ہندی مسلمان سب سے آگے ہیں اور ان کا یہ خیال بھی ہے کہ اگر ہندی مسلمان علمِ حدیث کی ترقی و اشاعت کے لئے اس قدر جانفشانی سے کام نہ لیتے تو یہ علم اب تک ختم ہو چکا ہوتا 
اس کتاب میں جس کا موضوع علم حدیث کا مطالعے میں ہند کا حصہ ہے 
             یہ جائزہ لینے کی عاجزانہ کوشش کی گئی ہے
راقم الحروف(عقیل قریشی) نے اس کتاب میں جن محدثین کا 
ذکر پڑھا ہےان میں اکثر و بیشتر صوفی بھی ہیں یعنی پاک و ہند میں علم حدیث کی اشاعت صوفیاء اکرام ہی نے کی ہے یہ پھونڈا الزام صوفیاء پر لگا یا جاتا ہے کہ وہ علم حدیث میں کمزور تھے تو کیا علمائے ظواہر کی تصنیفات مین ضیعف اور موضوع حدیث نہیں ملتی؟؟ تو پھر صوفیاء کی مطعون کیوں؟
اگر تاریخ کا گہرائی سے مطالعہ کیا جائے تو دین کہ ہر شعبہ 
میں اصل کردار صوفیاء ہی کا ملتا ہے




علم حدیث میں برصغیر پاک و ہند کا حصہ









0 comments:

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

علمی وفکری اختلاف آپ کا حق ہے۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔