Nov 1, 2013

شیخ محمد بن عبد الوہاب اور شاہ ولی اللہ محدث دہلوی ؒ ڈاکٹر اسرار صاحب کی نظر میں

0 comments
[IMG]
Add caption

یہ اقتباس ڈاکٹر صاحب کی کتاب’’مروجہ تصوف یا سلوک محمدی ‘‘ سے لیا گیا ہے ،کاش جس تصوف کو ڈاکٹر صاحب صیح سمجھتے تھے، (میرے خیال وہ شاہ ولی اللہؒ علیہ سے بہت متاثر تھے ،جیسا کہ مذکور کتاب سے ظاہر ہے) خود بھی حاصل کرتے ،اسی کو اپنی جماعت میں رائج کر جاتے ،مگر حقیقت یہ ہے عملی تصوف کے بغیر تصوف کو جاننا مشکل ہے۔مگر تصوف کا علم صرف کتابیں پڑھنے حاصل نہیں ہوتا،بلکہ اسکے لئے اور بھی شرائط ہیں۔
اس اقتباس سے صوفیا کی عظمت اور مرتبہ منکرین تصوف پر حجت ہے۔اور یہ بھی معلوم ہوا کہ اہل علم ،منکرین تصوف اور داعی تصوف اسلامی کو کس نظر سے دیکھتے ہیں۔


اللهم ارنا الحق حقا وارزقنا اتباعة وارنا الباطل باطلا وارزقنا اجتنابه


0 comments:

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

علمی وفکری اختلاف آپ کا حق ہے۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔