Apr 18, 2014

ذکر اللہ بطریق پاس انفاس ،علماء کرام ،مفتیان کرام اور مشائخ عظام کی نظر میں zikr_pas_anfas

0 comments
پاس انفاس سے مراد اصطلاح تصوف میں وہ طریقہ ذکر ہے ،جس میں سانس کی آمد وشد دھیان کر کے اللہ ھو کا ذکر کیا جتا ہے،زیر نظر کتانچہ میں علماء اکرام کے فتوی جات کو جمع کیا گیا ہے ،کہ آیا مفتیان دین کے نزدیک یہ عمل کیسا ہے۔ مختلف مدارس سے مکتلف مسالک کے فتوی جات ہیں ،نیز بعض فتوٰی میں وضاحت بھی موجود ہے۔
پاس انفاس پر اکابرین  دیوبند ،مولانا حسین احمد مدنی ؒ  مولانا رشید احمد گنگوئیؒ اور دیگر اکابر کی رائے بھی موجود ہے.اس وقت سلسلہ نقشبندیہ اویسیہ میں اس طریقے سے ذکر کیا جاتا ہے۔




0 comments:

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

علمی وفکری اختلاف آپ کا حق ہے۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔