Oct 8, 2013

تصوف صفائے قلب کا نام ہے

0 comments
تصوف صفائے قلب کا نام ہے
دیکھا گیا ہے کہ بیماری میں انسان اکثر کھانا پینا ترک کر دیتا ہے،باوجود اسکے کہ انہیں غذا کی ضرورت ہوتی ہے۔لیکن احساس ضرورت یعنی بھوک نہیں لگتی ،خوراک کے بغیر مزید لاغر ہو جاتے ہیں اور موت کے قریب تر ہو جاتے ہیں۔انسانی روح کی غذا تجلیات باری تعالیٰ ہیں ،اسکی صحت کا مدار عبادت پر ہے۔فرائض روح کی صحت و بقاء کیلئے بنیادی غذا ہیں۔توبہ اسکا علاج ہے اورذکر اللہ علی الدوام یعنی ہر لمحہ اللہ کی یاد میں رہنا اسکی حیات ہے۔جب روح ذکر اللہ سے غافل ہوتی ہے تو بیمار ہو جاتی ہے،بیمار روح کو نیکی کی بھوک نہیں لگتی،عبادات اس پر گراں گذرتی ہے ،اور باالآخر ترک ہو جاتی ہیں تصوف اس فن کا نام ہے جو روح کو یعنی قلب کو پھر صحت و جلا بخشتا ہے،تصوف صفائے قلب کا نام ہے ،اسکے ماہرین مشائخ کہلاتے ہیں ،ان کے سینے ان حیات آفریں برکات سے روشن ہوتے ہیں ،جو آپ ﷺ کے قلب اطہر سے کائنات میں جاری ساری ہیں۔ہر دور میں ان برکات سے انسانی قلوب کا تزکیہ (صفائی) کرنا آپ ﷺ کا منصب جلیلہ ہے کیونکہ قیامت تک آپ ﷺ کا دور رسالت ہے لہذا ہر دور میں ایسے روشن سینے ضرور ہیں گے،جو ان برکات کے امین ہونگے،اور جن کی صحبت میں رہ کر خلوص سے ذکر اللہ کی نعمت حاصل کر کے تزکیہ (تصوف ) حاصل ہو سکے گا۔(ماہنامہ المرشد اکتوبرء ۲۰۱۳؁ دارالعرفان منارہ)
برکات نبوت صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم

0 comments:

آپ بھی اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

علمی وفکری اختلاف آپ کا حق ہے۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔